Posted on

حدیث کاموضوع

آج  کی

کاموضوع ” اتباع سنت نبی صلی اللہ علیہ  وسلم” یے۔اس سلسلے میں آج ہم صلح حدبیہ اورسنتِ نبویﷺ کااتباع کی کہانی پڑ‍ھیں گے۔

اللہ کے نبیﷺ نے فرمایا۔”جس نے میری سنت سے منہ موڑا، اس کا مجھ سے کوئی تعلق نہیں۔“اس حدیث کی روشنی میں ہم آج صلح حدیبیه کی کہانی پڑھیں گے

نبی صلی اللہ علیہ  وسلم کے صحابہ نے صلح حدیبیہ کے موقع پر سنت نبوی پرعمل کرنے کے لئے ہم سب کے لئے ایک اچھی مثال قائم کی۔ وہ سنت پر عمل  کرنے میں تھوڑی سی تاخیربھی برداشت نہیں کر تے تھے- چنانچہ یہ کہانی سننے کے بعد ہم بھی ہر کام میں ہمیشہ اپنے اتباع سنت نبی کریں گے۔ان شا ء اللہ

اتباع سنت نبی اور صلح حدیبیہ کی کہانی

صلح حدبیہ اورسنتِ نبویﷺ کااتباع

پیارے بچو، صلح حدبیہ اورسنتِ نبویﷺ کااتباع کی کہانی او طرح ہے کہ جب کعبہ مکہ میں بت پرستوں کی تحویل میں تھا۔ مسلمان خانہ کعبہ کو دیکھنے کے لئے ترس رہے تھے۔کہ ان کے لئے خدا کا گھر دیکھنا بہت حسرت کی بات تھی۔حضرت محمد صلی اللہ علیہ  وسلم نے اعلان کیا کہ وہ  اپنے صحابہ کے ساتھ غیر مسلح  ہو کرعمرہ  کے لیے مکہ مکرمہ جائیں گے

اس ارادے سے وہ اپنے صحابہ کے ساتھ مدینہ سے روانہ ہوۓ۔ انہوں نے عمرہ کے بعد قربانی کے لئے اونٹ اور دوسرے جانورساتھ لئے تھے۔ جب حجاج کرام کا یہ قافلہ مکہ کے نواح میں پہنچا۔ تو حضور کو اطلاع ملی کہ مشرک انہیں شہر میں داخل نہیں ہونے دیں گے اور وہ انہیں ایسا کرنے سے روکنے کے لیے طاقت کا استعمال کریں گے۔ اس اطلاع نے مسلمانوں میں زبردست تشو یش  پیدا  کی۔ وہ مکہ کے شمال میں حد یبیہ نامی جگہ پر ایک کنویں کے قریب رک گئے۔

حضرت محمد صلی اللہ علیہ  وسلم نے قریش کو پیغام بھیجا کہ وہ صرف عمرہ کی غرض سے آئے ہیں۔اورخانہ کعبہ کے روایتی سات چکر لگا نا چاہتے ہیں، جانوروں کی قربانی کرنا چاہتے ہیں اور پھر اپنے صحابہ کے ساتھ مدینہ واپس جانا چاہتے ہیں۔ قریش اس سے متفق نہیں تھے۔ اور بھی بہت سے پیغامات بھیجے گئے۔لیکن قریش نے کہا کہ وہ مسلمانوں کو مکہ میں داخل نہیں  ہونے دینگے۔آخر کار انہوں نے مسلمانوں کو ایک معاہدہ پیش کرنے پر رضامندی ظاہر کی۔

پیارے بچو!یہ معاہدہ مسلمانوں کے بالکل خلاف لگتا تھا۔لیکن ہمارے نبی صلی اللہ علیہ  وسلم نے اسے قبول کر لیا۔ اس معاہدے کے مطابق مسلمان اس سال  واپس جائیں گے اور اگلے سال حج ادا کرنےکے لئے آئیں گے۔ حضرت محمد صلی اللہ علیہ  وسلم نے صحابہ کو حکم دیا کہ وہ اپنے بال کاٹ لیں اور اپنے جانوروں کو حد یبیہ کے اس مقام پر قربان کر دیں۔کیونکہ اللہ نے انکے عمرے کو قبول کر لیا تھا۔ لیکن صحابہ یہ کام کرنے کو تیار نہیں تھے۔ وہ مکہ ہر حال میں جانا چاہتےتھے۔

چنانچہ جب ہمارے نبی صلی اللہ علیہ  وسلم نے دیکھا کہ یہاں کوئی بھی عمرے کی رسومات ادا کرنے کو تیار نہیں ہے۔تو وہ پریشان ہو گئے ۔  وہ اپنے خیمہ میں چلے گئے۔اور اداس بیٹھ گئے۔لیکن ہمارے نبی صلی اللہ علیہ  وسلم کی بیوی نے آپ صلی اللہ علیہ وسلم  کومشورہ دیا کہ،

صحابہ کے دل ٹوٹ گئے ہیں۔وہ ابھی پریشان ہیں۔ اس لئے آپ کی بات نہیں مان رہے۔ لیکن صحابہ آپ سے بہت پیار کرتے ہیں۔ اس لئے آپ جا کر پہلے عمرہ کی\ رسم ادا کریں۔ اپنے بال کاٹ کر پہلے قربانی کرلیں۔ تاکہ صحابہ بھی آپ   صلی اللہ علیہ وسلم کے پیچھے چلیں ۔ جیسا کہ کبھی ایسا نہیں ہوا کہ صحابہ نبی صلی اللہ علیہ وسلم سنت کی پیروی نہ کریں۔

چنانچہ جیسے ہی ہمارے نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے رسومات ادا کرنا شروع کیں، صحابہ کو محسوس ہوا۔کہ وہ غلطی کر رہے  ہیں۔ انہوں نے جلدی سے سنت کی پیروی کی اور عمرے کےارکان  ادا  کیے ۔تو میرے پیارے بچوں، آپ دیکھ سکتے ہیں۔صحابہ واپس جا نے پر راضی نہیں تھے، لیکن انہوں نے کبھی سنت کی پیروی کرنے سے انکار نہیں کیا تھا۔ اسی لئے انہوں نےصلح حدبیہ اورسنتِ نبویﷺ کااتباع عمل کیا۔

تو ہمارے لئے بھی سنت ایک طرز زندگی اور صحت مند معاشرے کا نظریہ ہے۔ ہمارے دن اور رات، ہمارے کھانے اور کپڑے، ہماری پارٹیاں اور ہمارا اجتماع سب کچھ سنت نبی کے مطابق ہونا چاہئے۔

لیکن مجھے یہ کہنے سے ڈر لگتا ہے کہ صرف 50 فیصد لوگوں کو سنت کا اچھا علم ہے لیکن وہ بھی ان پر دل سے عمل نہیں کر رہے ہیں اور باقی 50 فیصد کو یہ بھی معلوم نہیں ہے کہ ہمارے  نبی صلی اللہ علیہ وسلم  نے کیسے زندگی گزاری ۔آئیے یہ  ارادہ کریں کہ ہم بھی سنت سیکھنے کی کوشش کریں گے۔ اور اتباع سنت میں صلح حدیبیہ میں صحابہ کی طرح عمل کریں گے

۔دوسروں کے ساتھ حدیث شیئر کریں۔ان شاء اللہ ہم سب سے اللہ قبول کرے گا.

صلح حدبیہ اورسنتِ نبویﷺ کااتباع کی اردو کہانی وڈیو

Video of this story in Englishصلح حدبیہ اورسنتِ نبویﷺ کااتباع

This story with hadith in English

Sunnah learning Worksheet

Enrolments Available

This is one of the hadith and story from My 30 short hadith with stories course. Online group classes are available online for all time zones. Recommended age for the class Hadith for kids is 7+. These classes are available in English and Urdu. If you want to enrol your child in our classes contact us via.

Other courses we have

  • Easy Tafseer for kids with interesting stories you can see that course in my hadith course tab.
  • Prayer for kids course a short course to teach about taharat, Gusal, wudu, times of prayers, number and names of prayers, pillers and conditions of prayer and method of prayer. Search as Prayer for kids course on search bar.
  • Ramzan boost course we do start 2 weeks before Ramzan.
  • Faith boos course In December to say No To Marry Christmas.
  • Kindness to Parents

Students home work

Follow me
(Visited 110 times, 1 visits today)
close

Oh hi there 👋
It’s nice to meet you.

Sign up to receive awesome content in your inbox, every month.

We don’t spam! Read our privacy policy for more info.

Leave a Reply

Your email address will not be published.